زرداری، نواز خوفزدہ، حکومت الیکشن کو 2023ء سے آگے لے جانیکی خواہشمند: عمران

لاہور: پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے چیئرمین اور سابق وزیر اعظم عمران خان نے کہا ہے کہ زرداری اور نواز شریف مجھ سے خوفزدہ ہیں، حکومت الیکشن کو 2023ء سے آگے لے جانے کی خواہشمند ہے۔
سینئر صحافیوں سے گفتگو میں چیئرمین پی ٹی آئی عمران خان نے کہا کہ اسٹیبلشمنٹ سے اس وقت کوئی رابطہ نہیں، جنرل باجوہ سے رابطہ رہتا تھا، انہوں نے سب کو ٹرک کی بتی کے پیچھے لگا کر رکھا، اسٹیبلشمنٹ ایک حقیقت ہے، قانون کی حکمرانی میں وہی کردار ادا کرسکتی ہے، اسٹیلشمنٹ میں اوپر بیٹھا شخص ہی سب کچھ ہوتا ہے۔

سابق وزیر اعظم نے کہا کہ اب بھی باجوہ ڈاکٹرائن چل رہی ہے، حکومت انتخابات 2023ء سے آگے لے کر جانا چاہتی ہے، معاشی صورتحال میں انتخابات کو آگے لے کر جانا ممکن نہیں، معیشت کی یہی صورتحال رہی تو فروری مارچ تک ملک ڈیفالٹ کر جائے گا، مجھے بند گلی میں دھکیلنے کا مطلب ملک کو بند گلی میں دھکیلنا ہے۔

عمران خان کا کہنا تھا کہ جنرل باجوہ نے شہباز شریف کو جیل میں فون کرکے مزاج پرسی کی تھی، میں نے جنرل باجوہ سے پوچھا تھا یہ آپ کیا کر رہے ہیں، اگر شہباز شریف کی مزاج پرسی کرنی ہے تو جیلوں میں قید باقی لوگوں کا کیا قصور ہے، میرے خوف کے باعث نواز شریف اور زرداری انتخابات سے راہ فرار اختیار کر رہے ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں