سیلاب سے بد ترین تباہی کا سامنا، اس وقت عملی کام کی ضرورت ہے: وزیراعظم

اسلام آباد: وزیراعظم شہباز شریف نے کہا ہے کہ سیلاب کے باعث بد ترین تباہی کا سامنا ہے، اس وقت صرف یکجہتی کی باتیں کافی نہیں، عملی کام کی ضرورت ہے، جانتا ہوں کون فیلڈ میں کام کر رہا ہے اور کون نہیں؟ عوام اس موقع کو یاد رکھیں گے کون آیا اور کون غائب رہا۔

وفاقی کابینہ کے اجلاس کے دوران گفتگو کرتے ہوئے وزیراعظم نے کہا کہ سیکرٹری جنرل اقوام متحدہ نے سیلاب متاثرہ علاقوں کا دورہ کیا، انتونیو گوتریس کروڑوں پاکستانیوں کے ترجمان بنے، یو این سیکرٹری جنرل نے کہا گلوبل وارمنگ کی وجہ سے پاکستان کو تباہی کا سامنا ہے۔

شہباز شریف کا کہنا تھا کہ میرےعلم میں ہے کون کون فیلڈ میں کام کر رہا ہے اور کون نہیں، اس وقت یکجہتی کی باتیں کافی نہیں، عملی کام کی ضرورت ہے، پاکستان کے ساتھ نا انصافی کا دنیا کو ازالہ کرنا چاہیے۔

انہوں نے کہا کہ مزید 3،2 ہفتےمیں پانی اتر جائے گا اور لوگ اپنے گھر منتقل ہوجائیں گے، وفاقی وزرا سیلاب متاثرین کی مدد کیلئے آگے بڑھیں، عوام اس موقع کو یاد رکھیں گے کون آیا اور کون نہیں، کابینہ ارکان ویڈیو لنک کے ذریعے بھی اپنی ذمہ داریاں نبھا سکتے ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں